غوثِ اعظم علیہ الرحمۃ کے گیارہ نام

نُسخۂ بغدادی

    (ان شاء اللہ عزوجل سال بھر تک آفتوں سے حفاظت) 
ربیع الغوث کی گیارھویں شب (یعنی بڑی رات) سرکارِ غوثِ اعظم علیہ رحمۃ اللہ الاکرم کے گیارہ نام (اوّل آخر گیارہ بار درود شریف) پڑھ کر گیارہ کھجوروں پر دم کرکے اُسی رات کھالیجئے، ان شاء اللہ عزوجل سارا سال مصیبتوں سے حفاظت ہوگی۔ گیارہ نام یہ ہیں:۔

غوثِ اعظم علیہ الرحمۃ کے مختصر حالات

سرکار بغداد حضورِ غوثِ پاک رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا اسم مبارک ” عبدالقادر” آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی کنیت ” ابو محمد “اور القابات” محی الدین ، محبوب سبحانی ، غوث الثقلین ، غوث الاعظم ” وغیرہ ہیں، آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ٤٧٠ ھ میں بغداد شریف کے قریب قصبہ جیلان میں پیدا ہوئے اور ٥٦١ ھ میں بغداد شریف ہی میں وصال فرمایا ، آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کا مزار پر انوار عراق کے مشہور شہر بغداد میں ہے ۔

کرامات

سیدنا غوث اعظم رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ مدینہ منورہ سے حاضری دے کر ننگے پاؤں بغداد شریف کی طرف آرہے تھے کہ راستہ میں ایک چور کھڑا کسی مسافر کا انتظار کر رہا تھا کہ اس کو لوٹ لے ، آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ جب [۔۔۔]

حضرت عبدالملک ذیال رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ بیان کرتے ہیں کہ “میں ایک رات حضور پرُنور غوث پاک رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے مدرسے میں کھڑا تھا آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ اندر سے ایک عصا دست اقدس میں لئے ہوئے [۔۔۔]

ایک مرتبہ رات میں سرکارِ بغداد حضرتِ سیدنا شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے ہمراہ شیخ احمد رفاعی اور عدی بن مسافر رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ حضرت سیدنا امام احمد بن حنبل رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے مزار پرُ انوار کی زیارت [۔۔۔]

اوصاف جمیلہ

امام ربانی شیخ عبدالوہاب شعرانی اورشیخ المحدثین عبدالحق محدث دہلوی اور علامہ محمد بن یحیی حلبی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ متحریر فرماتے ہیں کہ “حضرت سیدناشیخ عبدالقادرجیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ تیرہ علوم میں تقریر فرمایا کرتے تھے [۔۔۔]

شیخ عبدالحق محدث دہلوی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ آپ کے علمی کمالات کے متعلق ایک روایت نقل کرتے ہیں کہ “ایک روز کسی قاری نے آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کی مجلس شریف میں قرآن مجید کی ایک آیت تلاوت [۔۔۔]

حضرت شیخ امام موقف الدین بن قدامہ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ فرماتے ہیں کہ “ہم ۵۶۱ ہجری میں بغداد شریف گئے تو ہم نے دیکھا کہ شیخ سید عبدالقادر جیلانی قدس سرہ النورانی اُن میں سے ہیں کہ جن کو وہاں پر علم [۔۔۔]

اولیاء کرام علیہم الرحمۃ کا اظہار عقیدت

شیخ ابوالحسن علی بن الہیتی علیہ الرحمۃ فرماتے ہیں کہ" میں نے شیخ عبدالقادر جیلانی علیہ الرحمۃ اور شیخ بقا بن بطو کے ساتھ سیدناامام احمد بن حنبل علیہ الرحمۃ کے روضۂِ اقدس کی زیارت کی، میں نے دیکھا کہ سیدنا امام احمد بن حنبل علیہ الرحمۃ قبر سے باہر تشریف لائے اور حضور سیدی غوث پاک علیہ الرحمۃ کو اپنے سینے سے لگا لیا اور انہیں خلعت پہنا کر ارشاد فرمایا: "اے شیخ عبدالقادر ! بے شک میں علم شریعت ،علم حقیقت، علم حال اور فعل حال میں تمہارا محتاج ہوں۔
سیدنا امام احمد بن حنبل رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ہمارے شیخ، امام اور سید ہیں اور ان سب کے سردار ہیں جو کہ اس زمانہ میں اللہ عزوجل کے راستہ پر چلتے ہیں یا جن کو حال دیا گیا، سیدنا شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ان کے احوال کی منزلوں میں امام ہیں، اللہ عزوجل کے سامنے ہمارے کھڑے ہونے میں امام ہیں، اس زمانے کے اولیاء اور تمام بلند مراتب والوں سے اس بات کا سختی سے عہد لیا گیا کہ ’’ ان کے قول کی طرف رجوع کریں اور ان کے مقام کا ادب کریں۔
شیخ ابو عمرو عثمان بن مرزوق قرشی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
جب سیدنا غوث اعظم رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ نے قَدَمِیْ هذِه عَلٰی رَقَبَة کُلِّ وَلِیِّ اللّٰه ارشاد فرمایا تھا تو اس وقت کوئی اللہ عزوجل کاولی زمین پر ایسا نہ تھا کہ جس نے تواضع کرتے ہوئے اور آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے اعلیٰ مرتبے کا اعتراف کرتے ہوئے گردن نہ جھکائی ہو تمام دنیائے عالَم کے صالح جنات کے وفد آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے دروازے پر حاضر تھے اور سب کے سب آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کے دستِ مبارک پر تائب ہو کر واپس پلٹے۔
شیخ ماجد الکردی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ
جس وقت حضور سیدنا غوث اعظم علیہ الرحمۃ نے بغداد مقدس میں ارشاد فرمایا: ’’ قَدَمِیْ هذِه عَلٰی رَقَبَة کُلِّ وَلِیِّ اللّٰه یعنی میرا یہ قدم اللہ عزوجل کے ہر ولی کی گردن پر ہے ۔‘‘ تو اس وقت خواجہ غریب نواز علیہ الرحمۃ اپنی جوانی کے دنوں میں ملک خراسان کے دامن کوہ میں عبادت کرتے تھے وہاں بغداد شریف میں ارشاد ہوتا ہے اور یہاں غریب نواز علیہ الرحمۃ نے اپنا سر جھکایااور اتنا جھکایا کہ سر مبارک زمین تک پہنچا اور فرمایا: ’’ بَلْ قَدَمَاکَ عَلٰی رَاْسِیْ وَ عَينِیْ بلکہ آپ کے دونوں قدم میرے سر پر ہیں اور میری آنکھوں پر ہیں۔
خواجہ غریب نواز رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ

غوث کسے کہتے ہیں ؟

” غوثیت ” بزرگی کا ایک درجہ ہے ، لفظِ ” غوث ” کے لغوی معنی ہیں ” فریاد رس یعنی فریاد کو پہنچنے والا ” چونکہ حضرت شیخ عبدالقادر جیلانی رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ غریبوں ، بے کسوں اور حاجت مندوں کے مددگار ہیں اسی لئے آپ رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ کو ” غوث الاعظم ” کے خطاب سے سرفراز کیا گیا اور بعض عقیدت مند آپ کو ” پیران پیر دستگیر ” کے لقب سے بھی یاد کرتے ہیں ۔

حضور غوث الاعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی اپنے مریدوں سے محبت

Our Websites